مجھے ایسا ہوتا نظر نہیں آرہا

kuch-khabrian-new-copy


عوام میںلوگ کافی بڑی تعداد میں یہ کہتے سنائی دیتے ہیں کہ میاں نواز شریف ہمیشہ کی طرح اس مرتبہ بھی اپنی بے پناہ دولت کے بل بوتے اور ملک کے انتظامی ڈھانچے میں ایک بڑا متحرک اور وفادار نیٹ ورک رکھنے کی بنا پر موجود ہ بحران سے صاف بچ نکلیں گے۔ کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو اِس ضمن میں میاں صاحب کی دوکامیابیوں کا ذکر بطور خاص کرتے ہیں۔ ایک تو یہ کہ جنرل راحیل شریف کافی گھن گرج دکھانے کے بعد ڈان لیکس کا معاملہ معرضِ التوا میں ڈال کر ایک بڑی اورپُرکشش پیشکش قبول کر کے چلے گئے۔ اور دوسری کامیابی یہ کہ پاناما لیکس کے کیس کے فیصلے کو اتنی دیر تک محفوظ رکھا گیا کہ بالآخر میاں صاحب کو 2-3 کا سامنا کرنے کی بجائے3-2کا ریلیف مل گیا۔
میں سمجھتا ہوں کہ مایوسی کفر ہے ۔ یہ ملک اس لئے ہرگز نہیں بناتھا کہ ایک تاجر اور صنعت کار خاندان کی جاگیر بن کر رہ جائے۔
مجھے تاریک سرنگ کے دوسرے سرے سے روشنی کی شعاعیں نظر آرہی ہیں۔ اس ملک کے جسم میں ایک بے رحم طبقے کے جو خونی پنجے گڑے ہوئے ہیں وہ اب کٹنے والے ہیں ۔ یہ ملک نہ مٹنے والی بھوک رکھنے والے اس سفاک طبقے کے شکنجے سے ضرور آزاد ہوگا۔
ڈان لیکس اور پاناما پیپرز ایسے کیس ہیں جن سے بچ نکلنے کے لئے میاں صاحب کو ملک کے دو مقبول اور عظیم اداروں کے اندر بے ضمیری کی روح پھونکنی ہوگی۔
مجھے ایسا ہوتا نظر نہیں آرہا۔۔۔

Scroll To Top