پھر وہی نعرہ۔۔ لے کر رہیں گے پاکستان

kuch-khabrian-new-copy

میں نے گذشتہ روز ”آج کی بات“ میں اس خدشے کا اظہار کیا تھا کہ کہیں ایسا نہ ہو کہ موذّن اذان دینا بھول جائے ،ہم سوتے رہ جائیں ۔۔ اور وہ بھی سوتے رہ جائیں جن کے جاگنے کا ہمیں انتظار ہے۔
ایسا نہیں ہوا۔ موذّن نے اذاں دے دی ہے۔
اللہ اکبر اللہ اکبر۔۔
حی الصلواة حی الصلواة۔۔
حی الالفلاح حی الالفلاح۔۔
وہ توسوئے ہی نہیں تھے جن کے جاگنے کا ہمیں انتظار تھا۔
پاناما کیس کا فیصلہ 20اپریل کو دو بجے سہ پہر سنایا جائے گا۔۔۔
مجھے اس بات میں کوئی شک نہیں کہ20اپریل2017کا دن ہمارے لئے 16دسمبر1971نہیں،14اگست1947ثابت ہوگا۔
میں اس سے زیادہ فی الحال کچھ نہیں لکھوں گا۔
میں نے ستر برس سے اسی دن کا انتظار کیا ہے۔۔ مجھے یاد ہے کہ ”لے کر رہیں گے پاکستان“ کا نعرہ پہلی بار میں نے بٹالہ کی گلیوں میں بلند کیا تھا۔ تب میری عمر سات برس تھی۔
آج بھی وہی نعرہ میری زبان پر ہے” لے کر رہیں گے پاکستان“
پاکستان ہم سے چھین لیا گیا تھا۔
کیا 20اپریل2017کو پاکستان ہمیں واپس مل جائے گا۔؟

Scroll To Top