لیکن۔۔۔۔

یہ ہفتہ بھی پانامہ لیکس کے فیصلے کے انتظار میں گذر گیا۔ عام رائے یہ ہے کہ یہ انتظار اب زیادہ لمبا نہیں ہوگا۔ اگر چہ وزیر اعظم ہاو¿س کے ذرائع کا خیال ہے کہ فیصلہ یومِ پاکستان یعنی یومِ اسلامی جمہوریہ پاکستان یعنی23مارچ سے پہلے نہیں آئے گا لیکن تاخیر کی جو وجہ زیادہ قرین قیاس ہے وہ یہ ہے کہ فاضل جج اس فیصلے کو واقعی ایک تارریخی دستاویز بنا کر جاری کریں گے۔ جسٹس کھوسہ نے یہی بات کہی تھی۔ اور چیف جسٹس ثاقب نثار نے وعدہ کیا تھا کہ نہ صرف یہ کہ انصاف ہوگا بلکہ انصاف ہوتا نظر آئے گا۔ حقیقت بھی یہی ہے۔ عدلیہ نے وزیر اعظم کو پورا پورا موقع دیا کہ وہ اپنے موقف کو ثبوت کا سہارا دیں لیکن۔۔۔۔۔

Scroll To Top